امریکہ طالبان معاہدہ فائنل،دستخطوں کیلئے پر وقار تقریب کی تیاریاں

پاکستان کو شرکت کی دعوت۔۔۔ پشتون گزٹ رپورٹ

امریکہ اور طالبان کے درمیان امن معاہدہ فائنل ہوگیا۔ امریکہ کا خصوصی نمائندہ زلمی خلیل زاد معاہدے کی متن آج کابل اور پھر اسلام آباد لے آئیں گے۔ تاکہ افغان حکومت اور پاکستان حکام سے ان کے درمیان تسلیم شدہ مندرجات شئیر کرے۔

معاہدہ کل رات دیر کو فائنل ہوگیا تھا اس وقت قطر کے دارلحکومت دوحہ میں ایک پروقار تقریب کی تیاری جاری ہے جس میں امن معاہدے پر طالبان اور امریکی نمائندے دستخط کریں گے۔ زلمی خلیل زاد آج پاکستان کو باضابطہ مدعو بھی کریں گے۔ اس تقریب میں شرکت کرے۔

تقریب میں پاکستان، امریکہ اور قطر وغیرہ کے علاوہ اقوام متحدہ ،یوریپ یونین کے نمائندے بھی شرکت کریں گے۔

چین اور روس کو بھی خصوصی دعوت دی جائے گی۔ امریکہ وزیر خارجہ مائیک پمپیو کے بھی تقریب میں شرکت متوقع ہے ۔معاہدے کے مطابق امریکی افواج 15 مہینے سے لیکر دوسال کے اندر اندر افغانستان سے نکل جائیں گے۔ طالبان کی ذمہ داری ہوگی کہ افغانستان سرزمین کسی دوسرے ملک کے خلاف استعمال نہ ہو ۔ معاہدے کےفورا بعدطالبان اور افغان قیادت کے درمیان بات چیت کا باقاعدہ آغاز بھی ہو جائے گا۔امکان ہے کہ معاہدے کے بعد طالبان ایک آدھی جنگ بندی کا اعلان بھی کرینگے۔

اور ڈاکٹر اشرف غنی کو اس بات پر قائم کریں گے۔کہ وہ طالبان کے اہم رہنما جو جیل میں قید ہے انہیں رہا کرے۔ ساتھ ساتھ طالبان کی قید میں بند امریکی افراد کو بھی چھوڑ جائنگے۔
طالبان امریکہ معاہدے کے بعد افغان کا اصل امتحان شروع ہوگا۔
کیونکہ افغان افغان مذاکرات میں اصل ایشوزپر بات ہوگی۔ افغان عبوری حکومت کے قیام کے حوالے سے تبادلہ خیال سرفہرست ہے ۔ اس طرح مکمل جنگ بندی ،حکومت کے ساتھ براہ راست مذاکرات اور طالبان کے آنے والے نظام میں حیثیت کیا ہوگی۔ کسی طرح اور کیسے طالبان جنگجووں کو نظام میں ضم کئے جائیںگے۔

شاید آپ یہ بھی پسند کریں

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.