پاکستان اسٹاک مارکیٹ بدترین مندی کا رجحان

بھارت کے ساتھ کشیدگی،ٹیکسز کے حوالے سخت اقدامات ،سیاسی غیر یقینی صورتحال کی وجہ سے سرمایہ کار مارکیٹ سے دور رہے

پشتون گزیٹ رپورٹ
اگست کے پہلے ہفتے پاکستان اسٹاک مارکیٹ بدترین مندی کی لپیٹ میں رہی جس کے نتیجے میں کے ایس ای100انڈیکس 2200پوائنٹس کم ہو گیا اور انڈیکس31ہزاراور30ہزار پوائنٹس کی دو بالائی حد سے کم ہو کر29ہزار پوائنٹس کی انتہائی کم ترین سطح پر بند ہوا ،مند ی کے سبب مارکیٹ میں سرمایہ کاروں کے 324ارب روپے ڈوب گئے اور سرمائے کا مجموعی حجم 63کھرب روپے سے گھٹ کر60کھرب روپے رہ گیا

نئی حکومت کے اقتدار سنبھالنے کے بعد پہلی مرتبہ پاکستان اسٹاک مارکیٹ پر شدیدترین مندی دیکھی گئی اور مارکیٹ مسلسل پانچوں دن مندی کی لپیٹ میں دیکھی گئی ۔اسٹاک ماہرین کے مطابق پاکستان اور بھارت کے درمیان کشیدگی ،ٹیکسز کے حوالے سے ایف بی آر کے سخت اقدامات ،سیاسی افق پر چھائی غیر یقینی صورتحال اور مارکیٹ میں سرمایہ کاری کے حوالے سے نیا ٹریگر نہ ہونے کی وجہ سے گذشتہ ہفتے سرمایہ کاری مارکیٹ سے دور رہے اور انہوں نے سرمایہ کاری کرنے سے نہ صرف ہاتھ کھنچ لیا بلکہ سرمائے کے انخلاءاور فروخت کو بھی ترجیح دی جس کیوجہ سے مارکیٹ مسلسل مندی کی زد میں رہی ۔

ہفتہ وار رپورٹ کے مطابق گذشتہ ہفتے پاکستان اسٹاک مارکیٹ میں کے ایس ای100انڈیکس میں2237.34پوائنٹس کی کمی ریکارڈ کی گئی جس سے انڈیکس31666.41پوائنٹس سے کم ہو کر29429.07پوائنٹس ہو گیا اسی طرح کے ایس ای30انڈیکس 1258.73پوائنٹس کم ہو گیا جس سے انڈیکس 15051.90پوائنٹس سے کم ہو کر13793.17پوائنٹس پر آگیا جبکہ کے ایس ای آل شیئرز انڈیکس 22976.33پوائنٹس سے گھٹ کر21767.69پوائنٹس پر بند ہوا ۔

بدترین کاروباری مندی کے سبب مارکیٹ کے سرمائے میں3کھرب24ارب82کروڑ11لاکھ 26ہزار275روپے کی کمی ریکارڈ کی گئی جس کے نتیجے میں مارکیٹ کا مجموعی سرمایہ 63کھرب44ارب97کروڑ13لاکھ 95ہزار413روپے سے گھٹ کر60کھرب20ارب15کروڑ2لاکھ69ہزار138روپے رہ گیا ۔

پاکستان اسٹاک مارکیٹ میں گذشتہ ہفتے ٹریڈنگ کے دوران بڑی مندی کی لہر آنے سے انڈیکس ایک موقع پر29333.20پوائنٹس کی پست ترین سطح پر بھی آگیا تھا ۔گذشتہ ہفتے مارکیٹ میں زیادہ سے زیادہ 4ارب روپے مالیت کے10کروڑ90لاکھ97ہزار حصص کے سودے ہوئے جبکہ کم سے کم1ارب روپے مالیت کے 5کروڑ20لاکھ9ہزار حصص کے سودے ہوئے تھے ۔

اسٹاک مارکیٹ میں گذشتہ ہفتے مجموعی طور 1619کمپنیو ں کا کاروبار ہوا جس میں سے 482کمپنیوں کے حصص کی قیمتوں میں اضافہ ،1041میں کمی اور96کمپنیوں کے حصص کی قیمتوں میں استحکام رہا ۔گذشتہ ہفتے مندی کے باوجود کاروبار کے لحاظ سے میپل لیف ،کے الیکٹرک ،حب پاور ،ٹی آر جی پاک لمیٹڈ ،فوجی فرٹیلائزر ،پاک پیٹرولیم ،ورلڈ کال ٹیلی کام ،آئل اینڈ گیس ڈیولپمنٹ ،پاک الیکٹرون ،انٹرنیشنل اسٹیل لمیٹڈ ،اینگرو پولیمر ،یونائیٹڈ بینک ،ڈی جی کے سیمنٹ ،ایگری ٹیک لمیٹڈ ،لوٹے کیمیکل ،بینک آف پنجاب ،نشاط ملز لمیٹڈ ،فیصل بینک ،چراٹ سیمنٹ ،حیسکول پیٹرول،اور ٹری اسٹار پولی سر فہرست رہے

شاید آپ یہ بھی پسند کریں

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.