خدارا جنگ کو نہ بھڑکاییں۔ فوج بھی اپنی اور لوگ بھی۔

سوشل میڈیا پر دو خطرناک ٹرینڈ کا مقابلہ. میڈیا خاص کر سوشل میڈیا کا بڑا منفی کردار

کسی بھی جنگ پہلا شکار سچ ہوتا ھے۔ شمالی وزیرستان میں پی ٹی ایم اور سکورٹی فورسسز کے درمیان جاری ٹینشن میں میڈیا اور خاص کر سوشل میڈیا بڑا منفی کردار ادا کررہا ھے۔ دو خطرناک ٹرینڈ چل رھے ہیں کویٰ کہتا ھے کہ
محسن داوڑ اور علی وزیر کے قافلے پر سکورٹی فورسسز نی فاٸرنگ کی۔ کویی یہ ٹرینڈ چلا رہا ھے کہ محسن داوڑ اور علی وزیر کے قافلے میں موجود گارڈز نے سکورٹی فورسسز پر فاٸرنگ کی جس سے متعدد سکورٹی اہلکار زخمی ہوے۔

میڈیا اور خاص کر سوشل میڈیا حالات کو ایسا پیش کر رھے ہیں کہ جیسا کہ ھماری فوج کسی دوشمن کے خلاف نبرد ازما ھے۔ دوسری طرف جو لوگ پی ٹی ایم کو ورغلا ریھے ہیں تو ایسا لگ رہا ھے جیسا کو وہ کسی دشمن ملک کی فوج کے خلاف اٹھ کھڑے ہوے ھیں۔ اس موقعہ پر ھم دونوں اطراف سے اپیل کرتے ھیں درخواست کرتےہیں۔کہ صبراور احتیاط سے کام لیں کیونکہ سوشل میڈیا اور بعض نیوز چینلز بھرپور کوشش میں لگےہیں۔کہ فوج کو اپنے ہی لوگوں کے خلاف ایک بار پھر استعمال کرے۔دوسری طرف پی ٹی ایم کو بھی ورغلایا جارھا ھے۔کہ فوج کے خلاف اٹھ کھڑے ہوں۔

ساتھ ھی سوشل میڈیا پر دو خطرناک ٹرینڈ چلا رھے ہیں۔ and اور دونوں اطراف سے ایسا لگ رھا ہے۔ کہ بھارتی فوج اور کشمیریوں میں گھمسان کی لڑای ھو۔اللہ کے لے ملک پر رحم کریں۔اپنی فوج کو اپنے لوگوں کے خلاف نہ بڑھکایں۔

خدارا حالات کو سمجھ لیں دوشمن ان حالات سے بھر پور پیدا اٹھا رھا ھے۔ اور خوب تما شہ بھی ھورھا ھے۔

بايد تاسي دا هم خوښ کړيي

ځواب ورکئي

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.